وہ 6 اقدامات جو 2023 میں سعودی عرب کی نئی پہچان کا باعث بنے

وہ 6 اقدامات جو 2023 میں سعودی عرب کی نئی پہچان کا باعث بنے

سال 2023 اپنے اختتام کے قریب ہے لیکن اس سال سعودی عرب نے عالمی افق پر اپنی شناخت مزید نمایاں کر دی ہے۔ عرب نیوز کے مطابق اس حوالے سے سعودی عرب کی نمایاں کامیابیاں درج ذیل ہیں۔

١: ایکسپو 2030 کی میزبانی کرنا

اس سال سعودی عرب نے ایکسپو 2030 جیت لیا ہے، جو اس بڑے ایونٹ کی میزبانی کرنے والا متحدہ عرب امارات کے بعد مشرق وسطیٰ کا دوسرا ملک بن گیا ہے۔

٢: رونالڈو کی آمد

رواں سال لیجنڈ فٹبالر رونالڈو نے سعودی فٹبال کلب النصر ایف سی کے ساتھ دو سالہ معاہدہ کیا۔ مبینہ طور پر وہ سالانہ 200 ملین ڈالر کمائے گا، جو دنیا میں سب سے زیادہ معاوضہ لینے والا فٹبالر ہے۔

٣: العلا کا بڑھتا ہوا کردار

العلا نے 2020 میں واپس آنے والوں کا خیرمقدم کرنا شروع کیا، لیکن اس کے بعد سے اس نے ان گنت تہواروں اور ٹی وی سیریلز کی میزبانی کی ہے، جن میں مقبول ٹی وی سیریز ‘دبئی بلنگ’ بھی شامل ہے۔

٤: 2034 فیفا ورلڈ کپ کی میزبانی کرنا

سعودی عرب ممکنہ طور پر 2034 میں 25ویں فیفا ورلڈ کپ کی میزبانی کرے گا، کیونکہ دیگر دعویدار بین الاقوامی فٹ بال ٹورنامنٹ کی میزبانی کی دوڑ سے دستبردار ہو گئے ہیں۔

٥: پہلی عرب خاتون خلا میں گئی۔

اس سال سعودی عرب نے ایک نئی تاریخ رقم کی اور پہلی سعودی خاتون خلاباز ریانہ برناوی اور ان کے ساتھی علی القرنی سمیت چار خلا باز تاریخی سائنسی مشن پر بین الاقوامی خلائی اسٹیشن (آئی ایس ایس) کے لیے روانہ ہوئے۔

٦: خلیج تعاون کونسل کے ممالک کے لیے مشترکہ ویزا

خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) کے تمام ممالک کے شہریوں اور سیاحوں کو ایک دوسرے کے ممالک کا سفر کرنے کی اجازت دینے والے ویزا پر کام جاری ہے۔ یہ ویزا 2025-2024 میں شروع ہونے کی امید ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں