قطر کی امن کوششیں جاری اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی میں دو روز کی توسیع 30

قطر کی امن کوششیں جاری اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی میں دو روز کی توسیع

قطر کی امن کوششیں جاری اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی میں دو روز کی توسیع

قطر نے پیر کے روز کہا کہ غزہ میں ابتدائی چار روزہ جنگ بندی ختم ہونے کے بعد اسرائیل اور حماس کے درمیان لڑائی میں دو دن کا انسانی وقفہ ہو گا۔

  فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق قطری وزارت خارجہ کے ترجمان ماجد الانصاری نے ایکس (ٹوئٹر) پر ایک پوسٹ میں کہا ہے کہ ریاست قطر اعلان کرتی ہے کہ غزہ کی پٹی میں جاری انسانی جنگ کے ایک حصے کے طور پر ختم ہو جائے گی۔  ثالثی کی کوششیں  شٹ ڈاؤن کو مزید دو دن تک بڑھانے کا معاہدہ طے پا گیا ہے۔’

اس سے قبل مصر کے ایک سینیئر اہلکار نے کہا تھا کہ مصر اور قطر غزہ میں اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی کو دو دن تک بڑھانے کے لیے ایک معاہدے تک پہنچنے کے قریب ہیں۔

  مصر کی سٹیٹ انفارمیشن سروس کے سربراہ دیا راشوان نے پیر کو کہا کہ توسیع میں 20 اسرائیلیوں کی رہائی بھی شامل ہو گی جنہیں حماس نے 7 اکتوبر کو جنوبی اسرائیل پر حملے کے دوران یرغمال بنایا تھا۔  اس کے بدلے میں اسرائیلی جیلوں میں قید 60 فلسطینی قیدیوں کو رہا کیا جائے گا۔

  واضح رہے کہ چار روزہ جنگ بندی پیر کی شب ختم ہونے والی ہے، دیا رشوان نے مزید کہا کہ پیر کو 11 اسرائیلی یرغمالیوں کی رہائی متوقع ہے، 33 فلسطینیوں کی رہائی کے لیے بھی بات چیت جاری ہے۔  اس سے قبل یہ خبر آئی تھی کہ حماس چار دن کی توسیع چاہتی ہے جبکہ اسرائیل روزانہ کی توسیع چاہتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : بجلی کا بل چیک کرنے کا طریقہ

  ایک اسرائیلی اہلکار نے اسرائیل کے اس موقف کو دہرایا کہ وہ 10 یرغمالیوں کے ہر گروپ کی رہائی کے لیے ایک اضافی دن کی جنگ بندی پر رضامند ہو گا۔  اس کے بدلے میں ہر بار تین گنا زیادہ فلسطینی قیدیوں کو رہا کیا جائے گا۔  عہدیدار نے مزید کہا کہ حد پانچ دن ہوگی۔

واضح رہے کہ اسرائیل اور حماس کے درمیان چار روزہ جنگ بندی کے دوران مجموعی طور پر 50 مغویوں اور 150 فلسطینی قیدیوں کو رہا کیا جانا ہے۔  جنگ بندی کے پہلے دن حماس نے تقریباً 240 میں سے 24 یرغمالیوں کو رہا کیا۔ غزہ سے رہا ہونے والوں میں 13 اسرائیلی، 10 تھائی اور ایک فلپائنی تھا۔

حماس نے جنگ بندی معاہدے کے دوسرے مرحلے میں ہفتے کو دیر گئے 39 فلسطینیوں کے بدلے 13 اسرائیلیوں اور چار غیر ملکیوں کو رہا کیا۔  حماس نے اتوار کو جنگ بندی معاہدے کے تیسرے مرحلے میں 14 اسرائیلیوں سمیت مزید 17 یرغمالیوں کو رہا کر دیا۔  اس معاہدے کے تحت اسرائیل نے اتوار کو 39 فلسطینی قیدیوں کو بھی رہا کیا۔

  اسرائیل نے حماس کے خلاف جنگ کا اعلان کیا جب اس نے 7 اکتوبر کو اسرائیل پر سرحد پار سے حملہ کیا، جس میں تقریباً 1200 افراد ہلاک اور 240 کو یرغمال بنا لیا۔  حماس کے زیر کنٹرول علاقے میں صحت کے حکام کے مطابق غزہ میں اسرائیلی حملے میں 13 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں