بابراعظم کی بھارت روانگی سے قبل اہم پریس کانفرنس 58

بابراعظم کی بھارت روانگی سے قبل اہم پریس کانفرنس

بابراعظم کی بھارت روانگی سے قبل اہم پریس کانفرنس

بابراعظم کی بھارت روانگی سے قبل اہم پریس کانفرنس

پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابراعظم نے کہا ہے کہ بطور ٹیم ان کے حوصلے بلند ہیں اور وہ آئی سی سی ورلڈکپ 2023 بھارت میں اپنی بہترین کرکٹ کھیلنے کی کوشش کریں گے۔

ورلڈ کپ کے لیے بھارت کی روانگی سے ایک روز قبل منگل کو لاہور میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے بابراعظم نے کہا کہ ہمیں فخر ہونا چاہیے کہ آپ ایک ٹیم اور ایک کھلاڑی کے طور پر آئی سی سی ورلڈکپ میں جا رہے ہیں۔ بطور کپتان اور کھلاڑی بھارت میں کھیلنے کا کوئی دباؤ نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ورلڈکپ 2023 کے لیے پاکستان اسکواڈ کا اعلان

انہوں نے مزید کہا کہ ہم بھارت میں نہیں کھیلے لیکن بھارت کے بارے میں جتنی معلومات ملی ہیں، وہ یہ ہے کہ بھارت کی پیچ کنڈیشنز پاکستان سے کافی مماثلت رکھتی ہیں، اب بھارت جاکر ہی معلوم ہوگا کہ پیچ اور باؤنڈری کیسی ہے۔

بابر اعظم نے ایشیاکپ میں خراب کارکردگی کے بعد ورلڈکپ میں کی جانے والی تبدیلیوں کے بارے میں کہا کہ ایشیا کپ میں دو میچوں سے پہلے ہم پہلے نمبر پر تھے، اس بات سے بالکل اتفاق ہے کہ انہوں نے دو میچوں میں اچھی کارکردگی نہیں دکھائی، ہم نے اس سے بہت کچھ سیکھا ہے۔

بابراعظم نے مزید کہا کہ ‘آپ ہر نقصان سے سیکھتے ہیں، ہم اس پر بات کرتے ہیں کہ ہم اسے کیسے بہتر کر سکتے ہیں’۔ ایشیا کپ ایک مختلف جگہ پر ایک مختلف ٹورنامنٹ تھا۔ یہ ورلڈکپ ہے، اس کے لیے ہم ایک مختلف حکمت عملی کے ساتھ آئیں گے۔

ٹیم کمبینیشن کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کمبی نیشن کا انحصار کنڈیشن پر ہوتا ہے۔ آپ کو کیا چاہیے شرط الگ ہے کہ دو اسپنرز کے ساتھ جائیں یا تین تیز گیند بازوں کے ساتھ۔ وہ وہی کریں گے جو ٹیم کے لیے بہتر ہو گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ‘ہماری فیلڈنگ میں کچھ خامیاں تھیں، اسے بہتر کرنے کی ضرورت ہے’۔ درمیانی اوورز میں وکٹیں لینا بہت ضروری ہے۔ ہم اس پر بھی ایک مختلف منصوبہ لے کر آئیں گے۔

بابر اعظم کا کہنا ہے کہ مجھے اپنی ذات سے زیادہ ٹیم پر بھروسہ ہے، میں جانتا ہوں کہ وہ ایسا کریں گے (یعنی میچ جیتیں گے)۔ میں جانتا ہوں کہ میری طاقت کیا ہے۔’

کھلاڑیوں اور بورڈ کے درمیان سینٹرل کنٹریکٹ کے معاملے، ورلڈکپ کے لیے ویزوں میں تاخیر اور کھلاڑیوں کی انجریز کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کپتان نے کہا کہ ہر چیز میں رکاوٹیں ہوتی ہیں، ہم اسے سائیڈ پر رکھنے کی کوشش کرتے ہیں۔ لڑکوں پر بہت زیادہ دباؤ ڈالنے کے لیے پی سی بی نے ہمیں کنٹریکٹ کے بارے میں کیا بتایا، ہم نے کیا بتایا، پی سی بی کھلاڑیوں کا اچھا سوچتا ہے، اس بار بھی اچھا سوچے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں