شاہین شاہ آفریدی بھارتی اوپنرز کے لیے خطرہ بن گئے 64

شاہین شاہ آفریدی بھارتی اوپنرز کے لیے خطرہ بن گئے

شاہین شاہ آفریدی بھارتی اوپنرز کے لیے خطرہ بن گئے

شاہین شاہ آفریدی بھارتی اوپنرز کے لیے خطرہ بن گئے

سری لنکا کے پالیکیلے کرکٹ سٹیڈیم میں پاک بھارت ٹاکرا ایشیا کپ 2023 میچ بارش کی نذر ہو گیا، شاہین شاہ آفریدی بھارتی اوپنرز پر بھاری ثابت بارش کے باعث دونوں ٹیموں کو ایک ایک پوائنٹ دے دیا گیا۔

ہفتہ کو پالیکیلے میں ہندوستانی کرکٹ ٹیم نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے پاکستان کو جیت کے لیے 267 رنز کا ہدف دیا تھا، لیکن پاکستان شدید بارش کی وجہ سے بیٹنگ شروع نہیں کر سکا۔

بارش شروع ہونے کے بعد عملے نے وکٹ اور گراؤنڈ کو کور سے ڈھانپ دیا تاہم بارش ڈیڑھ گھنٹے تک نہیں رکی۔

پچ اور گراؤنڈ کا معائنہ کرنے کے بعد امپائرز نے دونوں ٹیموں کو ایک ایک پوائنٹ دینے کا اعلان کیا۔

میچ ڈرا ہونے کے بعد پوائنٹس ٹیبل پر پاکستان کے تین پوائنٹس ہیں جبکہ اس نے دو میچ کھیلے ہیں جبکہ ایک میچ کھیلنے کے بعد بھارت کے پاس ایک پوائنٹ ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ایشیا کپ 2023 انڈین سکواڈ کا اعلان

اس سے قبل ہندوستانی کپتان روہت شرما نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور ان کی پوری ٹیم 49ویں اوور میں 266 رنز پر ڈھیر ہوگئی۔

ہندوستان کی جانب سے کپتان روہت شرما نے شبمن گل کے ساتھ مل کر بیٹنگ کا آغاز کیا جب کہ پاکستان کی جانب سے شاہین شاہ آفریدی اور نسیم شاہ نے ابتدائی اوورز کی بولنگ کی۔ شروع میں بارش کی وجہ سے میچ کو دو بار روکنا پڑا۔

ہندوستان کی بیٹنگ اچھی شروعات نہیں کرسکی اور اس کے چار کھلاڑی 66 کے مجموعی اسکور پر پویلین لوٹ گئے۔

شاہین شاہ آفریدی بھارتی اوپنرز کے لیے خطرہ بن گئے

پاکستان کے شاہین آفریدی نے پہلی دو وکٹیں حاصل کیں جبکہ ہندوستان کے اگلے دو کھلاڑی حارث رؤف تھے۔

روہت شرما 11 رنز بنانے کے بعد شاہین کے ہاتھوں کلین بولڈ ہوئے۔شبمن گل 10 رنز بنا کر حارث رؤف کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔

ویرات کوہلی چار رنز بنا کر شاہین آفریدی کی گیند پر بولڈ ہوئے جب کہ شیریاس آئر نے 14 رنز بنائے۔ ان کی وکٹ حارث رؤف نے حاصل کی۔

اس کے بعد ہاردک پانڈیا اور ایشان کشن کے درمیان طویل شراکت قائم ہوئی جس کے دوران 138 رنز بنائے۔ بھارت کی پانچویں وکٹ 204 کے مجموعی سکور پر گری۔؟؟ ایشان کشن 82 رنز بنا کر حارث رؤف کی گیند پر بابر اعظم کو کیچ دے بیٹھے۔ انہوں نے 81 گیندوں کا سامنا کیا۔

ہندوستان کو چھٹا نقصان 239 کے مجموعی اسکور پر ہوا جب ہاردک پانڈیا 87 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ انہوں نے شاہین آفریدی کی گیند پر امام الحق کا کیچ لیا۔ اس کے بعد روندرا جدیجا آؤٹ ہوئے جنہوں نے 14 رنز بنائے۔ وہ شاہین آفریدی کا شکار بن گئے۔ آٹھویں وکٹ شردل ٹھاکر کی گری جب وہ نسیم شاہ کی گیند پر پویلین لوٹ گئے۔ اس وقت بھارت کا مجموعی سکور 242 تھا۔ بھارت کی نویں وکٹ 262 جبکہ آخری وکٹ 266 رنز پر گری تھی۔

پاکستان کی جانب سے شاہین آفریدی نے چار جبکہ نسیم شاہ اور حارث رؤف نے تین تین وکٹیں حاصل کیں۔

اگر ہم پاکستان اور بھارت کے درمیان ون ڈے میچوں کی تاریخ کی بات کریں تو اس فارمیٹ میں دونوں ٹیمیں 132 مرتبہ آمنے سامنے ہو چکی ہیں، جس میں پاکستان نے 73 مرتبہ اور بھارت نے 55 مرتبہ کامیابی حاصل کی ہے۔؟؟ ایشیا کپ میں روایتی حریف 13 بار آمنے سامنے ہو چکے ہیں، جس میں سات بار بھارت اور پانچ بار پاکستان نے کامیابی حاصل کی۔

شاہین شاہ آفریدی بھارتی اوپنرز کے لیے خطرہ بن گئے

اگر ہم پاکستان اور بھارت کے درمیان گزشتہ 10 ون ڈے میچوں کی بات کریں تو بھارت نے سات اور پاکستان تین بار جیتا ہے۔

اس سے قبل 2022 میں کھیلے گئے ایشیا کپ میں پاکستان اور بھارت کے درمیان دو میچز ہوئے تھے جس میں پاکستان نے ایک جیتا تھا اور دوسرا بھارت نے جیتا تھا تاہم یہ ایشیا کپ ٹی ٹوئنٹی فارمیٹ پر مبنی تھا۔

شاہین شاہ آفریدی، شاہین شاہ آفریدی ،شاہین شاہ آفریدی

اپنا تبصرہ بھیجیں