10

ووٹوں کی دوبارہ گنتی نہیں کی جا سکتی سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے جمعہ کو پی ٹی آئی کی درخواست کی سماعت کرتے ہوئےکہا کہ یہ واضح ہے کہ آج ووٹوں کی دوبارہ گنتی نہیں کی جا سکتی سپریم کورٹ کورٹ نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف پی ٹی آئی کی درخواست کی سماعت کی جس میں پنجاب کے وزیر اعلیٰ کے انتخاب کے لیے ڈالے گئے ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا حکم دیا گیا تھا۔

ی کیس کی سماعت کرنے والے تین ججوں میں سے ایک جسٹس اعجاز الاحسن نے کی۔ دیگر میں چیف جسٹس عمر عطا بندیال ہیں، جو بنچ کی سربراہی کر رہے ہیں اور جسٹس جمال خان مندوخیل بنچ کا حصہ ہے۔

سماعت کے دوران سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی اور وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز کو ان پٹ کے لیے طلب کیا گیا۔

چیف جسٹس نے کہا کہ یہ انا کا معاملہ نہیں ہے اس میں ملک کی فلاح و بہبود شامل ہے۔
ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو ہدایت کی گئی کہ وہ سپیکر کو عدالتی احکامات سے آگاہ کریں۔

سماعت 30 منٹ کے لیے ملتوی کر دی گئی۔
انہوں نے کہا کہ جیسے ہی حمزہ شہباز اور پرویز الٰہی لاہور رجسٹری پہنچیں گے، عدالت کارروائی کا آغاز کرے گی۔

چیف جسٹس نے کہا کہ اگر جواب 3:45 تک موصول ہوتے ہیں تو عدالت 4 بجے تک سماعت مکمل کر لے گی۔
ان کا کہنا تھا کہ آئین کے آرٹیکل 130 میں کئی شقیں ہیں اور اس کا حل اسی میں ہے۔

جسٹس بندیال نے کہا کہ دوبارہ انتخابات کے حوالے سے معاہدہ نہ ہوا تو اس سے کئی مسائل جنم لیں گے۔

انہوں نے کہا کہ عدالت کے اجلاس میں پنجاب اسمبلی کا اجلاس نہیں بلانا چاہیے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں